<body topmargin="0" leftmargin="0" bgcolor="#F9F8EC" bgproperties="fixed"><script type="text/javascript"> function setAttributeOnload(object, attribute, val) { if(window.addEventListener) { window.addEventListener('load', function(){ object[attribute] = val; }, false); } else { window.attachEvent('onload', function(){ object[attribute] = val; }); } } </script> <div id="navbar-iframe-container"></div> <script type="text/javascript" src="https://apis.google.com/js/plusone.js"></script> <script type="text/javascript"> gapi.load("gapi.iframes:gapi.iframes.style.bubble", function() { if (gapi.iframes && gapi.iframes.getContext) { gapi.iframes.getContext().openChild({ url: 'https://www.blogger.com/navbar.g?targetBlogID\x3d12814790\x26blogName\x3d%D8%A7%D8%B1%D8%AF%D9%88+%D8%A8%DB%8C%D8%A7%D8%B6\x26publishMode\x3dPUBLISH_MODE_BLOGSPOT\x26navbarType\x3dBLUE\x26layoutType\x3dCLASSIC\x26searchRoot\x3dhttps://bayaaz.blogspot.com/search\x26blogLocale\x3den_US\x26v\x3d2\x26homepageUrl\x3dhttp://bayaaz.blogspot.com/\x26vt\x3d2065659182679175016', where: document.getElementById("navbar-iframe-container"), id: "navbar-iframe" }); } }); </script>

Thursday, November 02, 2006

فرض کرو

فرض کرو ہم تارے ہوتے اک دوجے کو دور دور سے دیکھ دیکھ کر جلتے بجھتے اور پھر اک دن شاخِ فلک سے گرتے اور تاریک خلاؤں میں کھو جاتے دریا کے دو دھارے ہوتے اپنی اپنی موج میں بہتے اور سمندر تک اس اندھی، وحشی اور منہ زور مسافت کے جادو میں تنہا رہتے فرض کرو ہم بھور سمے کے پنچھی ہوتے اڑتے اڑتے اک دوجے کو چھوتے اور پھر کھلے گگن کی گہری اور بے وفا آنکھوں میں کھو جاتے ,اور باہر کے جھونکے ہوتے موسم کی اک بے نقش سے خواب میں ملتے ملتے اور جدا ہو جاتے خشک زمینوں کے ہاتھوں پر سبز لکیریں کندا کرتے اور ان دیکھے سپنے بوتے اپنے اپنے آنسو رو کر چین سے سوتے، !فرض کرو ہم جو کچھ اب ہیں وہ نہ ہوتے ۔۔۔ ۔۔۔ امجد اسلام امجد ۔۔۔ عکس کے دشتِ تنہائی سے



6: تبصرہ جات

: نے کہا Anonymous essjee

farz karo...hum ahlai wafa hon..faraz karo dewanain hon...

imajad.I.A has always been my fav...missing my diary..after goiung through it

11/02/2006 09:02:00 PM

 
: نے کہا Blogger Aks..

wah ji wah 'Aks ka dasht-e-tanhai':) shukar hai gosha-e-tanhai nahi likh diya:P

11/03/2006 12:32:00 AM

 
: نے کہا Anonymous Asma

@essjee: Oh the one you are mentioning is by Ibn e Insha ... and i love both AIA and Ibn e insha :)

@Aks: heheheh ... bas dekh lo :>

11/03/2006 09:33:00 AM

 
: نے کہا Anonymous ahsan

asslamo alaikum
i am gul from india. i like ur page. i want to add some good poetry in this blog. i want subscription. my id is ahmadahsan2000@yahoo.com

11/15/2006 06:33:00 PM

 
: نے کہا Anonymous DAUD KHAN

i really like this blog and plz i want to share some poetry.

3/18/2011 10:39:00 PM

 
: نے کہا Anonymous Hassan Mehmood

This blog is nice one. How to share poetry in your blog?

6/28/2013 05:08:00 PM

 

Post a Comment

<< صفحہ اول

بیاض کیا ہے؟

بیاض اردو شاعری اور ادب کا نچوڑ ہے

اراکینِ بیاض

اسماء

عمیمہ

حارث

میرا پاکستان

طلحہ

باذوق

حلیمہ

بیا

میاں رضوان علی

بیاض میں شمولیت؟

اگر آپ بیاض میں شامل ہونا چاہتے ہیں تو یہ قوائد پڑھ لیں، بعد از اپنے نام اس ای میل پر بھیجیں۔

دیکھنے میں دشواری؟

اردو کو بغیر دشواری کے دیکھنے کے لیے یہاں سے فونٹ حاصل کریں۔

گذشتہ تحریرات:

Powered by Blogger

بلاگ ڈیزائن: حنا امان

© تمام حقوق بحق ناشران محفوظ ہیں 2005-2006